متفرقات

ماہِ رمضان میں جلد کا خیال کیسے رکھا جائے

گرمی ،دھوپ اور روزے سےآپ کی  جلد بے جان ہوسکتی ہےکیونکہ آپ کے جسم سے  ضروری وٹامن اور نمکیات میں کمی واقع ہو رہی ہوتی ہے  لہٰذا  ماہ ِ رمضان میں اپنی جلد کا خیال رکھنااور اُسے شفاف اور تروتازہ رکھنا اور بھی زیادہ  توجہ طلب ہوتا ہے۔ اگر آپ سحر و افطار میں درست  اور ضروری غذائی اجزا استعمال کر رہے ہیں تو آپ  روزے رکھنے کے باوجود  دلکش و ترو تازہ رہ سکتے ہیں۔ تو جناب ماہ رمضان میں روزوں کے بھرپور طبی فوائد کے حصول میں  اپنے لیے متوازن اور صحت بخش غذا کا انتخاب کیجیے اور عید تک اپنے حسن کو دوبالا کر لیجیے۔

ایک سادہ اور اہم اصول  یاد رکھیں  کہ آپ اپنی غذا میں مختلف اقسام کے کھانوں کا استعمال رکھیں۔اگر آپ کے روزمرّہ کھانوں میں کچھ مخصوص اشیا ہی ہیں تو آپ کی جلد خشک اور  بے جان ہو سکتی ہے۔ایسا اس لیے ہے کہ جلد کو بھی  بالوں اور ناخنوں کی طرح کچھ خاص غذائی اجزا کی ضرورت ہوتی ہے جو انھیں نہیں مل پاتے ۔اس لیے آپ جتنا  اپنی خوراک کا خیال رکھیں گے اتنی ہی آپ کی جلد صحت مند اور تروتازہ نظر آئے گی ۔

ضروری غذائی اجزا جو صحت مند جلد کو برقرار رکھنے میں مددگار ہیں:

وٹامن اے:

یہ جلد کے لیے بہت اہم وٹامن ہے جو ڈی ہائڈریشن ختم کر کے جلد کو نرم ملائم اور ہموار رکھتا ہے۔ گاجر، آڑو، خوبانی، پالک اور ہرے پتوں والی سبزیاں وٹامن اے سے بھرپور غذائیں ہیں۔ رمضان کے مہینے میں ان تمام چیزوں کو ہفتے میں کم از کم ایک بار اپنے کھانوں، مشروبات یا سلاد میں استعمال کرنے سے بہتر نتائج مل سکتے ہیں۔

وٹامن بی:

وٹامن بی کی کمی سے جھریاں اور بڑھتی عمر کے اثرات جلد نمودار ہوتے ہیں۔ وٹامن بی گوشت ،دالوں اور اناج میں وافر مقدار میں پایا جاتا ہے۔ میدے سے بنی ڈبل روٹی کی جگہ اگر سالم اناج کی ڈبل روٹی سے سینڈوچ، رول اور دالوں کے سوپ  اور گوشت کی بنی چیزوں کا بھی استعمال کیا جائے تو وٹامن بی کی کمی نہیں ہو پائے گی۔

وٹامن ای:

وٹامن ای جلد پر پہلے سے موجود جھریوں کو کم کرنے میں بہت ضروری ہے۔ وٹامن ای خشک میوہ جات اور یجیٹیبل آئل میں پایا جاتا ہے۔ خشک میووں کا  فروٹ چاٹ اور دیگر کھانوں میں استعمال نیز  ویجیٹیبل آئل سے کھانوں کی تیاری بہت اچھے نتائج کا باعث ہوگی۔

وٹامن سی:

جلد کی چمک ،تازگی اور خوبصورتی میں اضافہ وٹامن سی سے ممکن ہے۔ پھلوں کے جوس اور فروٹ چاٹ کے استعمال سے یہ کمی دور کی جاسکتی ہے۔

اینٹی آکسیڈنٹ:

وٹامن اے بی اور سی کے علاوہ سلینئیم اور زنک بھی جلد کی صحت بر قرار رکھنے میں معاون ہیں ۔سی فوڈ ،گوشت، مرغی،  جھینگے سے بنی غذا کا استعمال  ماہِ رمضان میں اینٹی آکسیڈنٹس کی ضروریات کو پورا کرنے میں مددگار رہے گا۔

اومیگا تھری فیٹی ایسڈ:

مچھلی میں موجود اومیگا تھری فیٹی ایسڈ جلد کے لیے ایک بیریئر کا کام کرتا ہے۔ یاد رہے کہ تلی ہوئی مچھلی کی جگہ گرل یا اسٹیم فش کا استعمال کیا جائے۔

پانی:

سب اہم جز جو جسم کے ہر حصے کی صحت کے لیے یکساں  ضروری ہے۔ رمضان کے مہینے میں سحر و افطار کے دوران اور افطار کے بعد بھی پانی کا بہت زیادہ استعمال کریں ۔کم از کم آٹھ گلاس پانی بے حد ضروری ہے۔

رمضان میں مختلف انواع کے کھانوں کا استعمال کیا جاتا ہے اس لیے یہ ماہ اپنی جلد کو نئے انداز سے نمو بخشنے اور ہائڈریٹ کرنے کے لیے بہت موزوں ہے۔

گل زہرہ طارق
گل زہرہ ترجمہ نویس اور بلاگر ہیں۔ سٹیزن آرکائیوز پاکستان سے منسلک ہیں۔ روزمرہ زندگی کے امور اور پلکے پھلکے موضوعات پر لکھنا پسند کرتی ہیں۔
http://[email protected]

One thought on “ماہِ رمضان میں جلد کا خیال کیسے رکھا جائے”

اپنی رائے کا اظہار کیجیے